شعبان کے آخری ہفتے میں جس نے یہ ایک وظیفہ کر لیا وہ پوری زندگی مالا مال رہے گا، غریب سے غریب بھی اس وظیفے سے لکھ پتی ہو گیا

اس تحریر میں ایک ایسا عمل بتایا جائے گا قرآن پاک کی ایک سورت مبارک کا عمل ہے اور یہ آپ کرلیں گے تو آپ کی جتنی بھی مشکلات ہوں گی رزق کی تنگی ہو گی اور خاص طور پر رزق کی تنگی کے لئے یہ جو عمل ہے یہ بہت زیادہ مجرب ہے اس کو پڑھنے سے اللہ تعالیٰ آپ کی ساری مشکلات ختم کردیں گے اور آپ کو ایسی ایسی جگہ سے رزق عطا فرمائیں گے جہاں پر آپ کا گمان بھی نہیں جاتا ہوگا آج کل دولت کمانا ہر انسان کا شوق ہے اور جس کے پاس دولت ہوتی ہے سارے رشتہ دار سارے دوست اسی کے ہوتے ہیں جس انسان کی حالت خراب ہوتی ہے اور اس پر مفلسی اور غریبی ہوتی ہے تو اس پر رشتہ دار بھی ایسی ایسی باتیں کرتے ہیں اور اس کو وہ پروٹوکول یا وہ عزت نہیں ملتی جو پیسہ والے کو ملتی ہے تو یہ بہت ہی آسان سا عمل ہے آپ نے کرنا اس طرح ہے کہ آپ نے مغرب کے بعد جب آپ مغرب کی نمازادا کرلیں تو اسی وقت آپ نے اول آخر درود شریف پڑھ کر سات سات مرتبہ درود ابراہیمی پڑھ کر اکیس مرتبہ سورۃ الکوثر پڑھ لیجئے اسی طرح آپ جب تک آپ کے مسائل ہیں ایک دن دو دن تین دن آپ اس وظیفہ کو کرتے رہیں آپ کے زیادہ سے زیادہ پانچ یا سات منٹ لگ جائیں گے

انشاء اللہ اس کی برکات اتنی زیادہ ہیں کہ آپ کے سارے مسائل حل ہونا شروع ہوجائیں گے اللہ تعالیٰ آپ پر اپنے خزانوں کے منہ کھول دے گا اور آپ کی جتنی بھی پریشانیاں ہوں گی جتنی بھی آپ غربت میں قرضے میں گھر چکے ہوں گے انشاء اللہ اس وظیفہ کی برکت سے آپ کے وہ مسائل حل ہوجائیں گے اور آپ کو اللہ تعالیٰ بہترین نہ ختم ہونے والا رزق دے گا جو آپ کی نسلوں تک چلتارہے گا اس وظیفہ کی بہت زیادہ فیض و برکات ہیں

آپ اس کو کسی اور مقصد کے لئے بھی پڑھ سکتے ہیں جہاں پر آپ کو رشتوں کا مسئلہ ہے اپنی بچیوں کے لئے یاکوئی اور مسائل ہیں دشمنوں کا کوئی خوف ہے یا کہیں پر آپ کو کوئی مسئلہ ہے تو اس وظیفہ کو آپ کرسکتے ہیں لیکن یہ جو مغرب کے بعد کا عمل ہے یہ دولت کے لئے رزق کے لئے پیسے کے لئے بہت ہی بہترین عمل ہے میں خود اس وظیفے کا عامل رہا ہوں اور اس کی برکت سے اللہ تعالیٰ نے مجھے بہت زیادہ نوازا ہے اس وظیفہ کو کریں

آگے ان لوگوں کے ساتھ بھی بتا دیں جن کو مالی پریشانی کا سامنا ہے ۔اپنے اعمال پر توجہ دیجئے حقوق العباد لازمی پورے کیجئے اور حقوق اللہ کا بھی خیال رکھئے کیونکہ اللہ کبھی حقوق کے تلف کرنے والے کو پسند نہیں فرماتا قیامت کے دن اللہ اپنے حقوق تو معاف فرمادے گا

مگر حقوق العباد یعنی اللہ کی مخلوق کے حقوق جو آپ نے ادا نہیں کئے ہوں گے ان کو معاف نہیں فرمائے گا ان پر آپ کو سزاد دی جائے گی اور آپ کی نیکیوں سے ان حقوق کو ادا کیا جائے گا ۔ اللہ ہم سب کا حامی و ناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *