بے روزگار افراد کے لیے مجرب ترین عمل، جیسے ہی یہ عمل کریں گے نوکریاں دینے والوں کی لائن لگ جائے گی

آج آپ کے لیے ایک بہت ہی نا یا ب اور مجرب وظیفہ ان حضرات کے لیے جن کی شادی نہ ہو تی یا تو وہ شادی وغیرہ کے وہ پورے اسباب تیار کر لیتے ہوں مگر درمیان میں کسی بھی قسم کا رکاوٹ آ جا تا ہوں تو ان حضرات کو چاہیے کہ وہ روزانہ عشاء کی نماز کے بعد روزانہ عشاء کی نماز کے بعد تین سو دفعہ درودِ ابراہیمی

کو پڑھا کر ے وہ حضرات جن کی شادی نہ ہوتی ہو انشاء اللہ ہفتے اور مہینے کے اندر ا ن کی شادی ہو جائے گی یعنی اس کا رشتہ وغیرہ طے ہو جائے گا۔ اور دوسرا یہ کہ یقین جو ہے وہ اللہ کی ذات پر ہو اور عشاء کے ٹائم صلوۃ حاجت پڑھ کر یہ عمل کر لے تو انشاء اللہ جو بھی مسئلہ ہوگا وہ پورا ہو جائے گا ۔ جن کی شادی نہ ہو تی ہو جن کو اچھا رشتہ نہ ملتا ہو تو ان کے لیے یہ عمل بہت ہی زیادہ بہترین عمل ہے جب کوئی بھی کسی عامل کے پاس جا تا ہے تو وہ عامل اس کو تعویذ وغیرہ دے دیتا ہے اور اس کے ساتھ ساتھ وہ بہت سی رقم بھی ڈمانڈ کر تا ہے جس کو لے کر جو آدمی ہو تا ہے یا جو عورت ہوتی ہے وہ بہت پریشان ہو جاتی ہے کہ اتنی رقم میں کہاں سے لے کر آؤں گی تو اس صورت حال میں ان قسم کے اشخاص کے لیے میں یہی کہنا چاہوں گا کہ یہ جو وظیفہ ہے ۔ یہ بہت ہی مجرب وظیفہ ہے بہت ہی نا یا ب وظیفہ ہے جس کو کرنے سے انشاء اللہ رشتے کے کسی بھی قسم کے مسئلے کو لے کر انشاء اللہ جو بھی مسئلے

مسائل ہوں گے وہ دور ہو جائیں گے۔ اللہ کے نبی ﷺ ہمیں یہ کہا ہے کہ یہ عمل خود کر لیں آپ ﷺ خود عمل کیا کر تے تھے آپ نے کبھی شرم نہیں کیا کہ کوئی صحابی آپﷺ کے پاس آیا تو فوراً آپ ﷺ نے کوئی نہ کوئی چیز بتائی کہ یہ وظیفہ کر لے آپ یہ کا م کر لیں کسی جگہ پر کسی صحابی کوآپ ﷺ نے تعویذ نہیں دیا تعویذ دینا کسی بھی مسئلے کے لیے یا کسی بھی مسئلے کو حل کرنے کے لیے جا ئز ہے۔ لیکن آج کل لوگوں نے تو پیشہ بنا یا ہوا ہے جس کو وہ آڑ بنا کر لوگوں کو لوٹ رہے ہیں اور بہت سے غلط کام بھی ہو رہے ہیں اس معاشرے میں ان عملیات کو لے کر۔ آپ اگر جاؤ گے کہ ان سے پو چھو کہ میں نے مکان گر ا نا ہے تو وہ تعویذ دیں گے اور تعویذ دیتے ہوئے یہ بھی کہیں گے کہ اس تعویذ کے بغیر آپ کا مکا ن نہیں گر سکتا۔ تو یہ جو عمل ہے بہت ہی مجرب ہے۔ اس عمل کو کیجئے گا۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *