”آسمان کی طرف دیکھ کر صرف پندرہ بار یا وھابُ آسمان سے رزق کے طوفان آ جا ئیں گے۔ آزما لیں۔“

پیارے آقا ﷺ کا فرمانِ عالی شان ہے جس نے دن اور رات میں میری طرف شوق اور محبت کی وجہ سے تین تین مر تبہ درودِ پاک پڑھا اللہ پاک اس پر حق ہے کہ وہ اس کے اس دن اور اس رات کے گ ن ا ہ وں کو بخش دے گا۔ تم پر کروڑوں درود، طیبہ کے شمس تم پر کروڑوں درود، پیارے

آقا ﷺ پر کثرت کے ساتھ پڑھیے کیونکہ اگر آپ بال بچوں والے ہیں آپ کی اولاد نیک ہو جا ئے گی اور فر مانبردار ہو جا ئے گی اور ذہین ہو گی تین کام کر تے وقت چلتے پھرتے اُٹھتے بیٹھتے درودِ پاک کی کثرت کر تی ہیں تو ان کے ہر کام میں بر کت ہو تی ہے اور انہیں نیکی کا جذبہ ملتا ہے پیارے آقا ﷺ کی زیارت نصیب ہو تی ہے اور اللہ پاک ان کے گھر میں رزق ان کی اولاد ان کے مال جان میں بر کت عطا فر ماتا ہے اور اس کے علاوہ مرد حضرات جب صبح کام کے لیے جا تے ہیں تو انہیں چاہیے کہ نکلنے سے پہلے اپنے لیے ایسا کچھ کر کے جا ئیں کہ سارا دن مصیبتوں اور پر یشانیوں سے دور رہیں تو اس کا صرف ایک ہی حل ہے کہ وہ کثرت کے ساتھ درودِ پاک پڑھیں سارا دن جب بھی وقت ملے پیارے آقا ﷺ پر درودِ پاک پڑھنا شروع کر دیں اس کی بےشمار فضیلتیں اور بے شمار بر کتیں ہیں اگر کوئی گننا چاہیے تو اس کے پاس وقت

تک نہ بچے۔ حضرت سیدنا خلاد بن کثیر ؒ کے تکیے کے نیچے با وقت ِ و ف ات ایک کاغذ کا ٹکڑا ملا جس پر لکھا تھا ۔ یہ میرے لیے آ گ سے نجات کا پروانہ ہے لوگوں کے پوچھنے پر گھر والوں نے بتا یا کہ مرحوم ہر جمعہ ایک ہزار مر تبہ یہ درودِ پاک پڑھا کر تے تھے۔ اللہ رب العزت کی ان پر رحمت ہو اور ان کے صدقے ہماری بے حساب مغفرت ہو۔ الحمد اللہ نماز ایک عظیم نعمت ہے جو پابندی کے ساتھ پڑھے گا
وہ جنت کا حق دار ہو گا اور جو فرض نمازیں نہیں پڑھے گا وہ ع زاب کا حق دار بنے گا سورۃ مریم کی آیت نمبر ساٹھ میں ارشاد ہے کہ تو ان کے بعد ان کی جگہ ہو نہ خلف آ ئے جنہوں نے اپنی نمازیں گنوائیں اور اپنی خواہشوں کے پیچھے ہوئے تو عنقریب وہ جہ نم میں آئی کا جنگل پائیں گے بیان کی ہوئی اس آیتِ مقدسہ میں غیی کا تذکرہ ملا ہے غیی جہ نم میں ایک وادی ہے جس کی گرمی اور گہرائی سب سے زیادہ ہے اس میں ایک کنواں ہےجس کا نام ہب ہب ہے جب جہ نم کی آ گ بجھنے پرآ تی ہے اللہ اس کنویں کو کھول دیتا ہے جس سے وہ بد ستور پہلے کی طرح بھڑکنے لگتی ہے۔ اللہ پاک فر ما تا ہے کہ جب بجھنے پر آ ئے گی اور ہم انہیں اور بھڑک زیادہ کر یں گے یہ کنواں بے نمازیوں ز ا ن یوں اور س ود خوروں اور ماں باپ کو تکلیف دینے کے لیے ہے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *